ارشاد رانجھانی قتل کیس، ایڈیشنل آئی جی کراچی کو ہٹانے کا فیصلہ

0
117

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ سید مرادعلی شاہ ارشاد رانجھانی کے قتل کے معاملے میں غفلت برتنے پرکراچی پولیس پر برس پڑے،  ایڈیشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر عامر شیخ کو ہٹانےکا فیصلہ کرلیا۔

ذرائع نے بتایا کہ وزیراعلیٰ سندھ نے ارشاد رانجھانی کو بروقت اسپتال نہ پہنچانے  پر پرایڈیشنل آئی جی کراچی کو ہٹانے کا فیصلہ کیا۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ نے آئی جی سندھ کو بھی ایک خط لکھا ہے، جس میں انہوں نے پولیس کی غفلت پر تشویش کا اظھار کیا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے پولیس کےغیرپیشہ ورانہ رویے پر اظہار برہمی کا اظہار کرتے کہا کہ 6 فروری کو رحیم شاہ نے قومی شاہراہ پر بھیس کالونی کے پاس ارشاد رانجھانی کو قتل کیا، سوشل میڈیا پر موجود فوٹیج دکھا رہی ہے کہ یہ غیرانسانی اور ظالمانہ رویہ تھا۔

خط کے متن کے مطابق رحیم شاہ نے خود جج بن کر اور سزا دینے کا عمل کیا  اور حکومت کی رٹ کو چیلنج کیا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ رحیم شاہ نے زخمی ارشاد رانجھانی کو اسپتال لے جانے کی اجازت نہیں دی، اگر رحیم  شاہ کا دعویٰ درست سمجھا جائے پھر بھی قانون ارشاد رانجھانی کو قتل کرنے کا لائسنس نہیں دیتا، یہ فیصلہ  عدالتیں ہی کرسکتی ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ اس واقعہ سے عوام کا ریاست پر اعتماد مجروح ہوا ہے  اور  حکومت کی جانب سےجان و مال کی حفاظت کرنے کا عوامی اعتماد بھی متاثر ہوا ہے۔

خط میں انہوں نے کہا کہ پولیس نے غیر ذمہ دارانہ رویہ دکھایا اور وقت پر جائے وقوعہ پر نہیں پہنچ سکی جس وجہ سے ارشاد رانجھانی زخموں کا تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔

LEAVE A REPLY