سندھ یونیورسٹی کرپشن اسکینڈل: محکمہ اینٹی کرپشن سندھ نے مطلوبہ رکارڈ تحویل میں لے لیا

0
200

ویب ڈیسک: سندھ یونیورسٹی کے وی سی فتح محمد برفت کے خلاف حال ہی میں سامنے آئے ہوئے کرپشن اسکینڈل کی وجہ سے آج اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ سندھ نے یونیورسٹی پر چھاپہ مار کر ریکارڈ کو اپنی تحویل میں لے لیا۔

 

 

 

 

 

 

 

چیف منسٹر سندھ کی ہدایت پر اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ نے وی سی کی مبینہ کرپشن اور اختیارات کے ناجائز استعمال کی وجہ سے تحقیقات کا آغاز کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق شفیع برفت کی تعیناتی کے وقت جامعہ سندھ کے 52 اکاؤنٹس میں لگ بھگ 1۔1 ارب روپے پڑے ہوئے تھے مگر آج 27 اکاؤنٹس میں کوئی رقم موجود نہیں ہے۔مزید تفصیلات کے مطابق یونیورسٹی ملازمین کو تنخواہیں بھی بینکوں سے قرض لے کر ادا کی جارہی ہیں اور یونیورسٹی کے لیے گاڑیوں کی لین دین میں بھی کرپشن کے الزامات ہیں۔

ڈپٹی ڈائیریکٹر اینٹی کرپشن ضمیر عباسی نے اپنے آفیشل لیٹر میں جامعہ کے ڈائریکٹر فنانس کو برفت کی تعیناتی سے لے کر آج تک جامعہ کے تمام تر اکاؤنٹس کی تفصیلات، تمام گاڑیوں کی خریدوفروخت، وی سی اور اسکے اہلِ خانہ کے استعمال میں موجود گاڑیوں، فیول کارڈز اور یونیورسٹی میں ہونے والے تمام تر ترقیاتی کاموں سمیت عملے کی تعیناتی اور پروموشنز کی تمام تر تفصیلات جمع کروانے کی ہدایت کی تھی۔

LEAVE A REPLY