سندھ پبلک سروس کمیشن کی نااہلی کا ایک اور ثبوت سامنے آگیا

0
292

ویب ڈیسک: انتہائی باوثوق ذرائع کے توسط سے سندھ پبلک سروس کمیشن میں سنگین بے قاعدگیوں اور مالی بدعنوانیوں کا انکشاف ہوا ہے۔

ذرائع کے مطابق سندھ پبلک سروس کمیشن کے کاغذوں کی جانچ پڑتال کے عمل میں مجرمانہ غفلت برتی گئی، ایک ایسے امیدوار کو جس کے پاس دو مختلف صوبوں کا ڈومیسائل موجود ہے اور قانوناً ایسے امیدوار کو نااہل قرار دے دینا چاہیئے مگر اسکو ٹیسٹ میں بیٹھنے دیا گیا۔

 

 

 

 

 

 

 

تفصیلات کے مطابق امیدوار بلوچستان کے شہر کوئٹہ اور سندھ کے شہری ڈومیسائل پر دونوں صوبوں میں ہونے والے سروس کمیشن کے امتحانات دیئے۔ جس کے باعث اتنے بڑے ادارے کی مجرمانہ غفلت کا پردہ فاش ہوگیا۔

جبکہ دوسری طرف ایک خاتون امیدوار جنکا تعلق پنجاب کے ضلع ملتان سے ہے اور وہ وہاں کا ڈومیسائل بھی رکھتی ہیں وہ کراچی کے ڈومیسائل میں امتحان میں بیٹھی ہیں جو کہ سندھ پبلک سروس کمیشن کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

 

 

 

 

 

 

 

 

واضح رہے کہ ستمبر میں احتساب عدالت کے جج انعام علی کلہوڑو نےبھی ادارے کے سابقہ چیئرمین اور کنٹرولر پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے 18 افراد کی 2003-04 میں ہونے والے امتحانات میں غیر قانونی مدد کی۔

LEAVE A REPLY