علی ظفر اور میشا شفیع کا کیس 15 اپریل تک نمٹانے کا فیصلہ

0
72

لاہور: ممتاز گلوکار علی ظفر نے گلوکارہ میشا شفیع کے خلاف زیرسماعت مقدمہ کا فیصلہ ایک ماہ میں کرنے کی استدعا کی تھی جسے منظور کرتے ہوئے عدالت نے کیس کا فیصلہ 15 اپریل تک نمٹانے کا حکم جاری کردیا۔

یاد رہے کہ علی ظفر نے اپنے وکیل رانا انتظار کے توسط سے 15 اپریل کو درخواست دائر کی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ میشا شفیع اوران کے وکلا کو عدالت کا مزید وقت ضائع کرنے کی اجازت نہ دی جائے۔

معروف گلوکار کی جانب سے دائر درخواست پر عدالت نے سماعت کے لیے 19 مارچ کی تاریخ مقرر کی تھی جس پر آج سماعت ہوئی۔

دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ فریق مخالف سچائی چھپانے کے لیے تاخیری حربے استعمال کررہا ہے۔

ممتاز گلوکارہ میشا شفیع گزشتہ سال اپریل میں سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر لکھا تھا کہ معروف گلوکار علی ظفر نے انہیں ایک سے زائد مرتبہ جنسی طور پر ہراساں کیا ہے۔

میشا شفیع کا سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر کہنا تھا کہ میں اپنے ساتھ جنسی طور پر ہراساں کیے جانے کے واقعہ پر اس لیے خاموشی توڑ رہی ہوں کیونکہ مجھے لگتا ہے کہ اس اقدام کے ذریعے اُس روایت کو ختم کرسکتی ہوں جو ہمارے معاشرے کا حصہ ہے۔

گلوکارعلی ظفر نے اسی وقت اپنے ردعمل میں کہا تھا کہ میں سوشل میڈیا پر الزام تراشی کے بجائے میشا شفیع کو عدالت لے کر جاؤں گا۔

علی ظفر نے میشا شفیع کے خلاف 10 کروڑروپے ہرجانے کا دعوٰی دائر کر رکھا ہے جس میں اُن کا کہنا ہے کہ ہراسگی کا جھوٹا اور بے بنیاد الزام ان پہ عائد کیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY