چاچا کرکٹ کو کرکٹ دیکھتے 50 سال کا طویل عرصہ بیت گیا

0
239

کراچی: رپورٹ (موسیٰ غنی ):کرکٹ کی تاریخ جہاں دلچسپی سے بھرپور ہے وہیں پاکستان کرکٹ کے ایک کردار چاچا کرکٹ (المعروف عبد الجلیل )جنھوں نے آج کرکٹ دیکھتے ہوئے 50 سال مکمل کرلیے ہیں۔

انتھر سالہ صوفی جلیل عرف چاچا کرکٹ برطانیہ کے بارہویں دورے پر ہیں، انہوں نے ورلڈکپ 1999 ، 2009 کے ٹی 20 ورلڈکپ اور چیمپئنز ٹرافی 2003 اور 2017 میں گراؤنڈ میں رہ کراپنے جومنفرد انداز سے قومی ٹیم کا حوصلہ بڑھایا ۔

چاچا کرکٹ نے کرکٹ کےمیدانوں میں پاکستان کے ایسے نامور کھلاڑیوں کو سپورٹ کیا جو شاید آج ہماری آنکھوں سے اوجھل ہیں ۔

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے مقابلے کے موقع پر چاچا کرکٹ نے بتایا کہ انہیں آج کرکٹ دیکھتے اور قومی ٹیم کو سپورٹ کرتے 50 سال مکمل ہوگئے ہیں اور آج بھی یہاں اپنی ٹیم کو سپورٹ کرنے آیا ہوں اور چیمپئن ٹرافی کی طرح ورلڈکپ بھی قومی ٹیم کے نام ہوگا۔

قومی ٹیم کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے یہ دن پاکستانی شائقین کے لیے اچھا ثابت ناہوسکا لیکن اس کے باوجود ٹرینٹ بریج اسٹیڈیم میں چاچا کرکٹ کے جذبے میں کوئی کمی نہیں آئی اور  اپنے مخصوص انداز ‘جیتے گا بھئی جیتے گا پاکستان جیتے گا’ اور ‘زور سے بولو زور سے کھیلو’ کے نعروں سے ٹیم اور شائقین کا حوصلہ بڑھاتے رہے۔

چاچا کرکٹ نے اپنا پہلا میچ 1969 میں پاکستان اور انگلینڈ کا دیکھا تھا جب ان کے عمر محض 19 سال تھی۔ اس کے بعد سے ہر میچ میں قومی لباس میں ملبوس چاچا کرکٹ کو دیکھا جانے لگا۔انگلینڈ میں کھیلے جانے والے ورلڈکپ میں چاچا کرکٹ کو گلوبل اسپورٹس فین ایوارڈ سے بھی نوازا جائے گا۔

چاچا کرکٹ پاکستان کو یہ ایوارڈ 14 جون کو مانچسٹر میں دیا جائےگا۔

LEAVE A REPLY