اپوزیشن کا باغی سینیٹرز کیخلاف سخت تادیبی کارروائی کا فیصلہ

0
75

اسلام آباد: اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے تحریکِ عدم اعتماد کی رٹ فیل ہوجانے کے بعد شہباز شریف کی زیرِ صدارت تمام حزبِ اختلاف کی جماعتوں کا اجلاس ہواجس میں تمام باغی سینیٹرز کیخلاف سخت تادیبی کارروائی کا فیصلہ کیا گیا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہا کہ جن لوگوں نے  بھی ہمارے خلاف حکومتی امیدوار کو ووٹ دیا ان سب کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی۔

شہباز شریف نے کہا کہ جن لوگوں نے صادق سنجرانی کی حمایت میں ووٹ دیا ہے ان کا تعین کیا جائیگا اور انہیں سخت تادیبی کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ ہر سینیٹ اجلاس میں ہارس ٹریڈنگ کا معاملہ اٹھایا جائے گا۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سربراہ کا کہنا تھا کہ اس سیلیکٹڈ حکومت نے سینیٹ کو بھی سیلیکٹڈ کردیا ہے اور جن لوگوں نے ضمیر کے خلاف ووٹ دیا انکو نہیں چھوڑا جائے گا۔

دوسری جانب پی پی چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا کہ  سیلیکٹڈ حکومت نے سینیٹ پر حملہ کیا ہے اور کسی بھی  باغی رہنما کو نہیں چھوڑا جائیگا۔

انہوں نے کہا کہ ایسے چیئرمین کو خود ہی مستعفی ہوجانا چاہیے جسکے خلاف پچاس ممبران نے ووٹ دیا ہو۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ انکے تمام سینیٹرز نے انکو اپنا استعفیٰ بھجوا دیا ہے اور ضمیر کیخلاف ووٹ دینے والوں کیخلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائیگی۔

LEAVE A REPLY